Monday, 16 March 2009

لازم ہے کہ ہم بھی دیکھیں گے!











اور


ثابت ہوا کہ جہدِ مسلسل اور تبدیلی لازم و ملزوم ہیں۔
ثابت ہوا کہ عوامی طاقت کے آگے کوئی بند نہیں باندھا جا سکتا۔
اور ثابت ہوا کہ پاکستانی قوم ابھی مکمل طور پر بے حس نہیں ہوئی ہے۔

4 comments:

  • محب علوی says:
    16 March 2009 at 08:30

    بالکل ثابت ہو گیا کہ لگن سچی ہو اور موقف اصولی ہو تو محنت کا پھل مل ہی جاتا ہے

  • تانیہ رحمان says:
    16 March 2009 at 15:38

    ااسلام و علیکم
    فرحت اللہ کرئے یہ تحرک آزاد عدلیہ ملک کے لیے اچھی ثابت ہو غریب کی حالتپر رحم کیا جائے ۔ اور انصاف کے دروازے کھل جاہیں

    تانیہ رحمان, کی تازہ تحریر: عادت ہی بنالی ہے

  • امید says:
    28 March 2009 at 22:56

    بالکل ۔۔۔۔لگن سچی ہو تو طویل انیتظار ہی صحیح پر منزل مل ہی جاتی ہے

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    13 April 2009 at 23:56

    محب علوی: درست کہا :)
    تانیہ رحمان: وعلیکم السلام تانیا۔ اللہ تعالیٰ آپ کی اور ہم سب کی دعا قبول فرمائے (آًمین)
    امید: واقعی۔ :) مستقل مزاجی بڑے سے بڑے پہاڑ سر کر سکتی ہے۔

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔