Wednesday, 6 February 2008

جسے اللہ رکھے۔۔۔۔


(File Photo: International Herald Tribune)


جنوب مغربی جرمنی میں ترک مہاجرین کی رہائش گاہ میں اچانک آگ بھڑک اٹھی تو چوتھی منزل پر موجود والدین کو اپنی  ماہ کی بچی بچانے کا اس کے علاوہ اور کوئی ذریعہ نظر نہیں آیا کہ وہ بچی کو نیچے پھینک دیں اس امید پر شاید نیچے کھڑے لوگوں میں سے کوئی اس کو  گرنے سے بچا لے ۔ خوش قسمتی سے ایک پولیس مین بچی کو کیچ کرنے میں کامیاب ہو گیا۔۔اور بعد میں والدین کو بھی بحفاظت عمارت سے نکال لیا گیا۔ :smile:

2 comments:

  • ساجداقبال says:
    5 March 2008 at 13:25

    اور ہنسی خوشی رہنے لگے۔ :)

  • Virtual Reality says:
    5 March 2008 at 15:17

    جی بالکل کیونکہ والدین بھی خوش قسمتی سے زخمی نہیں ہوئے تھے۔۔۔

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔