Wednesday, 24 December 2008

کیوں بھلا؟

عوامی پارٹیوں  کی  قیادت "خواص" پر ہی کیوں مشتمل ہوتی ہے؟

بیک وقت لقمۂ اجل بننے والوں میں سے ایک ’شہید‘ اور باقی ’ہلاک شدگان‘ کیوں؟

اپنی  وزارتِ عظمیٰ کے دوران قتل ہونے والے وزیرِ اعظم  کے بجائے ایک سابق وزیرِ اعظم کی برسی سرکاری طور پر کیوں منائی جاتی ہے؟

19 comments:

  • راشد کامران says:
    24 December 2008 at 04:06

    وہ اسلیے کہ یہ مملکت خداداد ہے۔ یہاں جس کی بھینس اس کی لاٹھی :)

    راشد کامران’s last blog post..ہائے اس دس نمبر جوتے کی قسمت غالب

  • عبدالقدوس says:
    24 December 2008 at 08:56

    ایک پوری چھٹی کیوں؟
    10 کے سکے پر فوٹو کیوں؟
    آخر کیوں

    عبدالقدوس’s last blog post..جوتے بموں سے زیادہ طاقتور ہیں‌

  • ڈفر says:
    24 December 2008 at 12:09

    وطن سے دوری کا یہ بڑا نقصان ہوتا ہے
    باتیں سمجھ آنا بند ہو جاتی ہیں ;)

    ڈفر’s last blog post..زنانہ حکمران

  • بلو says:
    24 December 2008 at 23:57

    بیک وقت لقمۂ اجل بننے والوں میں سے ایک ’شہید‘ اور باقی ’ہلاک شدگان‘ کیوں؟

    اصل میں ان لوگوں کو شہادت کا مطلب ہی نہیں معلوم اس لئے کسی کو بھی شہید بنا دیتے ہیں۔ اور جو بچتے ہیں ان کو ہلاک شدگان اور کچھ خوش قسمت لوگوں کو جاں بحق ہونے کا اعزازبھی مل جاتا ہے۔
    کیٹگریاں بنائی ہوئی ہیں ہائی لیول کے لوگ شہید ان کے چمچے جاں بحق اور کمی کمین ہلاک :daydream

  • زین زیڈ‌ایف says:
    25 December 2008 at 04:10

    آج 25 دسمبر کو قائداعظم رح کی سالگرہ ہے لیکن تمام چینلز پر صرف اور صرف ’’بی بی‘‘ کی برسی کے ’’چرچے‘‘ ہیں‌

    زین زیڈ‌ایف’s last blog post..بزکشی، ایک دلچسپ کھیل

  • عبدالقدوس says:
    25 December 2008 at 16:30

    زین قائد کے بارے میں بتانے کے لیے ٹی وی نہیں‌بنایا انہوں نے پیسے کمانے کے لیے بنایا ہے :ainko

    عبدالقدوس’s last blog post..اے میرے قائد سالگرہ مبارک

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    26 December 2008 at 17:45

    @راشد کامران:
    معلوم نہیں اس مملکتِ خداداد میں عوام کی ہاتھ لاٹھی کبھی آئے گی بھی یا نہیں :-(

    @عبدالقدوس:
    آپ نے تو میرے باقی 'کیوں' بھی شامل کر دیئے۔ شکریہ :D
    @ڈفر:
    کسی حد تک درست بات ہے۔ لیکن پاکستان میں رہتے ہوئے بھی ایسی باتیں سمجھ سے باہر ہی ہوتی ہیں :)

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    26 December 2008 at 17:56

    @بلو:
    بہترین تجزیہ :)
    @زین زیڈ‌ایف:
    صحیح کہہ رہے ہیں زین آپ۔ میں بھی کل سارا دن یہی نوٹ کرتی رہی :-( پتہ نہیں یہ سلسلہ کہاں ختم ہو گا۔
    @عبدالقدوس:
    سب سے بڑا روپیہ :) ایسا کمرشل ازم قوموں کی روایات و نظریات پر جس طرح اثر انداز ہوتا ہے، ہمارا میڈیا اس کی بہترین مثال ہے۔

  • محمد وارث says:
    27 December 2008 at 10:28

    واقعی سوچنے والی بات ہے۔
    دوسری طرف یہ کہ ہماری کمپنی نے یہ چھٹی نہیں دی، اور آج ہمیں مجبوراً کام پر آنا پڑا۔

  • شکاری says:
    28 December 2008 at 02:44

    بری بات ایسی باتوں‌پر دھیان نہیں‌ لیتے :dont ایسے ہی دل برا ہوتا ہے اور فالتو کی ٹینشن الگ ۔ :dwh

  • شکاری says:
    28 December 2008 at 02:44

    بری بات ایسی باتوں‌پر دھیان نہیں‌ دیتے :dont ایسے ہی دل برا ہوتا ہے اور فالتو کی ٹینشن الگ ۔ :dwh

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    28 December 2008 at 17:53

    @ وارث:
    تاریخ میں لکھا جائے گا کہ آپ کی کمپنی نے ایک 'قومی نوعیت کے معاملے' پر کمپنی کے ذاتی فائدے کو ترجیح دی :D

    @شکاری:
    جب آپ کے چاروں اطراف ایک ہی راگ الاپا جا رہا ہو تو نہ چاہتے ہوئے بھی دھیان ادھر کو چلا جاتا ہے۔ :cry:

  • ڈفر says:
    28 December 2008 at 18:52

    ہماری تو تھی ہی چھٹی :party
    نہیں‌تو کمپنی ہماری بھی بڑی ۔۔۔ ہے

    ڈفر’s last blog post..نئے بلاگ فانٹس

  • زین زیڈ‌ایف says:
    28 December 2008 at 19:09

    ہم بے چاروں کی نہ تو 25دسمبر کو چھٹی تھی اور نہ ہی 27 دسمبر کو
    :aah :cry:

    زین زیڈ‌ایف’s last blog post..بزکشی، ایک دلچسپ کھیل

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    29 December 2008 at 21:09

    @ڈفر:
    آپ کو چھٹی تھی۔ یعنی قومی و سرکاری تعطیل کو بہت اخاطر خواہ انداز میں منایا آپ نے :D

    @زین زیڈ‌ایف:
    :cry: آپ کو کیوں چھٹی نہیں تھی زین؟ خصوصاً 25 دسمبر کو؟

  • زینو says:
    30 December 2008 at 04:21

    باقی سب دفاتر کی چھٹی تھی صرف ہماری نہیں‌تھی سب یہ اخبار مالکان کی وجہ سے ۔

    :cry:

    زینو’s last blog post..میرا شہر

  • آن لائن اخباری رپوٹر says:
    30 December 2008 at 14:58

    اگر قسمت سے چھٹی مل کئی ہے تو عیش کرو یارو، کیا پتہ کل یہ چھٹی ہو نہ ہو! ہاہاہا :party

    آن لائن اخباری رپوٹر’s last blog post..Music can lower cholesterol in blood

  • فرحت کیانی نے لکھا :۔
    31 December 2008 at 01:31

    @زینو:
    اوہ :(
    میرا خیال تھا کہ اخبار والوں کو بھی پبلک ہالیڈے پر چھٹی مل جاتی ہے تبھی تو اگلے دن اخبار نہیں چھپتے۔
    @آن لائن اخباری رپوٹر:
    جب تک انکل زرداری ایوانِ صدر میں موجود ہیں۔ چھٹی کا مستقبل روشن ہے :D

  • زین زیڈ ایف says:
    31 December 2008 at 02:30

    نہیں‌اخبارات صرف سال میں زیادہ سے زیادہ ساتھ آٹھ دن نہیں چھپتے یعنی عید والے دن ، محرم الحرام اور دیگر چھٹیوں پر ۔

    کہاں اخبارات نہیں چھپے ؟ پاکستان میں میرے خیال سے اس سال 25 دسمبر کو تمام اخبارات چھپے

    زین زیڈ ایف’s last blog post..میرا شہر

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔