Sunday, 26 August 2007

بلاگنگ اور جاگنگ

نجانے کیوں بلاگنگ کا لفظ ذہن میں آتے ہی جاگنگ کا خیال کیوں آ جاتا ہے؟؟شاید ہم قافیہ ہونے کی وجہ سے۔لیکن مجھے لگتا ہے کہ ان دونوں میں کچھ مماثلت ہے ضرور۔شاید دونوں ہی مستقل مزاجی اور باقاعدگی کے متقاضی ہیں۔ دونوں ہی کی عادت ہو جائے تو پھر، چھٹتی نہیں ہے ۔۔۔۔۔ والا حساب ہو جاتا ہے۔جاگنگ جسمانی ورزش ہے تو بلاگنگ ذہنی۔ مجھے تو بظاہر ایک ہی فرق نظر آتا ہے کہ جاگنگ میں پیروں کی شامت آتی ہے اور بلاگنگ میں ہاتھوں کی :)
مجھے ان دونوں میں سے کسی ایک کا بھی چنداں شوق نہیں ہے۔۔جاگنگ کی بجائےمیں سست رفتاری سے واک کرنے کو ترجیح دیتی ہوں اور کچھ کہنے کی بجائے سننے کا شغل زیادہ پسند ہے لیکن پھر بھی کسی نہ کسی طور دنیائے بلاگنگ میں قدم رنجہ فرما دیا۔امید ہے کہ خود تو اچھا برا جیسا بھی لکھا لیکن اس نگری میں آنے سے اچھے لکھاریوں کے خیالات سے مستفید ہونے کا موقعہ ملتا رہے گا۔

10 comments:

  • بدتمیز says:
    26 August 2007 at 20:05

    سلام
    سنتے سنتے کبھی کبھی کچھ کہنا بھی پڑتا ہے۔ گھٹن سے اظہار تک کے سفر پر مبارک۔

  • راہبر says:
    28 August 2007 at 06:58

    ارے واہ! بلاگنگ کو جاگنگ سے منسلک کرکے اچھوتے اور دلچسپ خیال کا اظہار کیا ہے۔ بلاگنگ میں ہاتھ کا استعمال ہے اور جاگنگ میں پیروں کا۔۔۔۔ اگرچہ ان دونوں کے استعمال کا آپ کو شوق نہیں لیکن بہرحال! ہاتھ کا استعمال، کچھ آسان ہے بہ نسبت پیروں کے استعمال سے۔۔۔
    بلاگنگ کی دنیا میں آمد مبارک ہو۔ امید ہے کہ ہمیں اچھی اچھی تحاریر پڑھنے کو ملیں گی۔

  • Virtual Reality says:
    28 August 2007 at 12:21

    وسلام بدتمیز۔۔
    بجا کہا۔۔واقعی بعض اوقات کچھ کہنے کو بھی جی چاہتا ہے۔۔
    بہت شکریہ۔۔ اس سفر کے لئے زادِراہ آپ لوگوں کی مدد سے ہی میسر ہوا ہے۔۔دعا کیجئے گا کہ سفر چل نکلا ہے تو جاری بھی رہے۔۔

  • Virtual Reality says:
    28 August 2007 at 12:26

    راہبر۔۔بہت شکریہ اتنے مزے کا تبصرہ کرنے کا۔۔ ویسے مجھے بلاگنگ اور جاگنگ کا شوق نہیں ہے۔۔ورنہ ہاتھوں پیروں کا استعمال تو کرنا پڑتا ہے نا۔۔اس دنیا میں رہتے ہوئے۔۔۔
    ویلکم کرنے کا بہت شکریہ ۔۔تحاریر تو ضرور پڑھنے کو ملیں گی لیکن "قابلِ پڑھ" ہونے کی گارنٹی دینا شاید مشکل ہو۔۔

  • ساجداقبال says:
    29 August 2007 at 03:17

    یہاں بات قارئین کی ہے اس لئے آپکو بلاگنگ پر توجہ دینی ہے۔ آپکی جاگنگ دیکھنے کوئی نہیں آئیگا۔ بلاگ کے آغاز پر مبارکباد۔۔۔۔اردو بلاگنگ میں‌آمد پر خوش آمید ۔۔۔پخیر راغلے

  • Virtual Reality says:
    29 August 2007 at 10:16

    خوش آمدید کہنے کا بہت شکریہ ساجد اقبال۔۔
    ٹھیک کہا آپ نے۔۔آپ کی رائے پر عمل کرنے کی کوشش کروں گی۔۔

  • ماوراء says:
    29 August 2007 at 15:25

    اچھا لکھا ہے فرحت۔ میرے تو ہاتھوں سے زیادہ دماغ کی ورزش ہوتی ہے۔ (جن کے پاس دماغ نہ ہو۔ ان کو زیادہ کھپانا پڑتا ہے۔:P)

    بلاگنگ کی دنیا میں قدم رکھنے پر مبارک۔ امید ہے کہ آپ اسی طرح لکھتی رہیں گی۔

  • محب علوی says:
    6 September 2007 at 07:06

    جاگنگ نہ سہی بلاگنگ تو شروع ہو گئی ویسے عمدہ خیال ہے اور بلاگنگ کو جاگنگ سے جوڑ کر سوچ کا ایک نیا دریچہ وا کیا ہے۔ مجھے امید ہے کہ سست روی سے ہی سہی مگر یہ سفر جاری رہے گا اور اردو کی مجازی دنیا میں اور دریچے کھلتے رہیں گے۔

  • بوچھی says:
    6 September 2007 at 17:07

    سلام، فرھت
    وےلکم،

  • Virtual Reality says:
    10 September 2007 at 12:53

    ماوراء۔۔۔آپ نے تو میرا حال کہہ دیا۔۔یقین مانیں مجھے اس طرح کے تخلیقی کام کرتے ہوئے اپنے دماغ کی ہزاروں خوشامدیں کرنی پڑتی ہیں تب کہیں جا کر ایک دو جملے لکھے جاتے ہیں۔۔ ویسے آپ کے بارے میں میرا یقین ہے کہ کسرِنفسی سے کام لے رہی ہیں۔۔آپ کی تحریر کی تو میں باقاعدہ فین ہو گئی ہوں۔۔

    ًمحب علوی: یہ سفر بھی آپ ہی کی مستقل مزاجی کا نتیجہ ہے ورنیہ مجھ سے ازلی سست کہاں اس طرف آتے ہیں۔۔ مجاز اور دریچہ کو اس طرح ملانے کے لئے بہت شکریہ :)

    بوچھی جی۔۔چشمِ ما روشن دلِ ماشاد۔۔
    بہت خوشی ہوئی آپ کو یہاں دیکھ کر :)

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔